واٹسن گِل (نیدرلینڈ)
مسیحی یورپ میں بھی محفوظ نہی؟۔(مُحبت نیوز)
 
افغعانی سیاسی پنا گزین علی (اصل نام نہی) جو کہ ناروے کے شہر جےرن کے اسالئم سینٹر ہا میں رہائش پزیر ہے ۔ اس پر دیگر مسلمان افغعانی مسلمانوں اس وقت حملہ کر دیا جب انہے یہ معلوم ہوا کہ علی سلام کو ترک کر کے مسیحی ہو چکا ہے ۔ تفصیل یہ ہے جیرن کے اسایئلم سینٹر میں علی اپنے چند ہم وطنوں کے ساتھ مقیم تھا۔ اس کے ساتھی اسے رمضان میں روزہ نہ رکھنے پر برہم تھے روز روز کے پوچنے پر ٌاخر علی نے انہی بتا دیا کو وہ مسیحیت کی تعلیم سے متاثر ہو کر مسیحیت قبول کر چکا ہے ۔یہ سنتے ہی وہ ٌاگ بگولہ ہو گئے اور علی کو بےتحاشہ مارنا شروع کر دیا۔اور دو نے اسے دبوچ کر نیچے گرا لیا اور ان میں سے ایک نے کھولتا ہو پانی علی پر انڈیل دیا جس سے علی کی گردن اور چہرے کا کچُھ حصہ بری طرح جُلس گیا۔ اُن میں سے کُچھ نے علی کے کمرے میں توڑ پوڑ بھی اور اُسے خطرناک نتائج کی دھمکی بھی دی۔ پولیس نے پہنچ کر علی کو طبی امداد کے لئے ہسپتال پہنچا دیے . پناروے کے اسایئلم سینٹر میں مزید 5 لوگوں میں بھی خوف و ہراس پھیل گیا جو اسلام کو چھوڑ کر مسیحیت کی سچائ میں ٌاچکے ہیں۔ولیس تفتیش کر رہی ہے
Advertisements