پاکستان میں ایک مسیحی خاندان کو مسیحی ہونے کی سزا دے دی گئ۔

بدقسمت بینڈکٹ جون اور اس کا خاندان کراچی کے معروف پکنک پوئنٹ ہاکس بے کے کنارے اپنے خاندان کے دیگر افراد کے ساتھ زندگی کے خوبصورت لمحات سے لطف انداز ہو رہے تھے۔ اس بات سے بے خبر کے شیطان کے چیلے موت کی صورت میں ان کے تعاقب میں ہیں۔ یہ خاندان ماری پور سے تعلق رکھتا ہے، اور کراچی کے معروف ساحل سمندر ہاکس بے میں ایک ہٹ بُک کروا کے پکنک میں مصروف تھے۔ خاندان کی چند خواتین کے گلے میں کراس پہنے دیکھ کر مسُلمان لڑکوں کا ایک ٹولہ ان کو تنگ کرنے لگا۔ ٹولے کے دو لڑکے ہٹ کی کھڑکی میں سے موجود خواتین کو جھانکنے لگے۔ جس پر بینیڈکٹ نے ان کو منع کیا تو وہ کہنے لگے کہ ہمیں سگرٹ دو، بینیڈکٹ نے کہا کہ میں سیگرٹ نہی پیتا۔ جس پر وہ گالی گلوچ پر اتر آئے اور کہنے لگے کہ تم عیسائ لوگ سمندر کو غلیظ کر رہے ہو دفعہ ہو جاو۔ بینڈکٹ نے ان سے درخواست کی کہ ہمیں اپنے بچوں کے ساتھ انجوئے کرنے دو ، مگر وہ نہ مانے اور ان میں سے ایک لڑکا نزدیک سے دو اور لڑکوں کو بلا لایا جو کہ جدید اسلحہ سے لیس تھے۔ آتے ہی انہوں نے بینڈیکٹ کے سر پر بنوق تان لی ، جسے دیکھ کر بینڈکٹ کی بھابی ان کی منت سماجت کرنی لگی مگر شیطان کے ان پجاریوں نے نہ صرف بینڈکٹ جان کے سر میں گولی مار دی بلکہ اس کی بھابی کی گردن پر گولی مار کر دونوں کو کو موت کی نیند سُلا دیا۔ اور بہت سکون کے ساتھ ہوائ فائرینگ کرتے ہوئے فرار ہو گیے۔ پولیس نے ناملعوم ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا

Advertisements