رپورٹ: واٹسن گل
نیدرلینڈز: 9-7-2013

سرگودھا میں ایک مسیحی خاتون کو چند بااثر افراد نے شدید تشدد کا نشانہ بنایا۔ سرگودھا میں 49 ٹیل کے قریب ایک مسیحی خاتون جو کہ شاپنگ کے لیے بازار آئ تھی مبینہ طور پر شدید تشدد کیا جس سے اس خاتون کی حالت غیر ہو گئ۔ اس واقعہ کے خلاف مقامی مسیحی آبادی نے شدید احتجاج کیا ، مریم ٹاون 49 ٹیل اور ملحقہ کریسچن آبادیوں کے مقینوں نے شدید غم اور غصہ کا اظہار کیا۔ مسیحیوں کا کہنا ہے کہ گزشتہ دو ہفتوں سے چند بااثر اوباش نوجوانوں نے مسیحی خواتین کا گھروں سے باہر نکلنا مُشکل کر دیا ہے۔ وہ مسیحی خواتین پر فحش جملے کستے ہیں، اور گزرتی مسیحی خواتین کو چھونے سے بھی دریغ نہی کرتے۔

اسی وجہ سے گزشتہ ہفتہ کو مسیحی نوجوانوں نے ان کا راستہ روکنے کی کوشش کی تو جدید اسلحہ سے لیس یہ بااثر افراد ان کو بھی خطرناک نتایج کی دھمکیاں دینے لگے۔ پہلے تو پولیس نے کوئ توجہ نہ دی۔ مگر جب کرسچن کمیونیٹی نے ایک مسیحی خاتون کو تشدد کا نشانہ بنانے کے خلاف سخت احتجاج کیا تو تب پولیس نے مقدمہ قایم کیا ہے۔ خیال رہے کہ جب بھی مسیحی کمیونیٹی کا کسی مسلم کمیونٹی سے تناضہ ہوتا ہے تو پھر مسیحیوں کو گستاخء رسول کے قانون میں جکڑ کر سزا دی جاتی ہے۔

تمام مسیحیوں سے اپیل کی جاتی ہے کہ وہ اپنے اپنے چرچز میں اپنے مصیبت زدہ بہن بھائوں کے لئے خصوصی دُعا کا اہتمام کریں۔ ہالینڈ میں بھی تمام پاکستانی چرچز ،اپنے اپنے چرچز میں ان کو یاد رکھیں۔

Advertisements