سانحہءکوہاٹی گیٹ چرچ کو نہ فراموش کریں گے اور نہ ہی اس واقعہ پر دھول پڑنے دیں گے۔ پاکستانی حکومت کو مسیحی جان مال کے تحفظ کو یقینی بنانا ہوگا، ورنہ ہم انصاف کے لیے ہر دروازہ پر دستک دیں گے۔
1379989_524756574284350_25936363_n
یورپ میں رہنے والے غیور مسیحیوں نے اپنے اپنے طور پر اپنی آواز اٹھائ، احتجاجی جلسے،جلاس اور میموریئل سروسس کا اہتمام کیا گیا۔ یہ سب قابل ستایئش ہے۔ مگر بات یہاں ختم نہی ہوئ۔ سانحہ کوہاٹی گیٹ چرچ پشاور کے متاثرین کا حال بھی گوجرہ اور شانتی نگر کے متاثرین سے مختلف نہی۔ حکومتی دعوے محض دعوے ہی ثابت ہو رہے ہیں۔ ہم خاموش نہی بیٹھیں گے۔ ہم نے پاکستانی ایمبیسی کے سامنے مظاہرہ کیا، نیدرلینڈز کی وزارت خارجہ کو اس سلسلے میں پٹیشن پیش کی اور اب ہم 28 اکتوبرکو بیلجیئم کے شہر برسلز میں موجود یوروپیئن یونین کی پارلیمینٹ کے سامنے ایک زبردست مظاہرہ کر رہے ہیں۔ اس مظاہرے کی سب سے خاص بات کہ یہ مظاہرہ یورپ اور برطانیہ کے مسیحیوں کی مشترکہ جدوجہد اور یکجہتی کی علامت ہوگا۔ تمام مسیحوں سے درخواست ہیں کہ اس میں دل ؤجان سے شرکت کرکے اس کو کامیاب بناییں۔ ان اقدامات سے ہم یوروپیئن پارلیمنٹ کو درخواست کریں گے کہ وہ پاکستانی حکومت کو پابند کریں کہ پاکستان میں مسیحوں کی حفاظت کی جایے ،ان کی چادر اور چار دیواری کے تقدس کا احترام کیا جایے۔ اور برابر کا شہری تسلیم کیا جایے۔
1234638_524756277617713_482419456_n
اس احتجاج کے انتظامی امور کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دی جا چُکی ہے جس میں نیدرلینڈز اور بیلجیئم کی نامور سیاسی، سماجی، ادبی اور مزہبی شخصیات شامل ہیں۔ اور مجھے اس بات کی خوشی ہے کہ مجھے ان جیسی قدآور شخصیات کے ساتھ کمیٹی میں شامل کیا گیا ہے۔ اس کمیٹی میں بیلجیئم بلکہ یورپ میں سیاسی خدمات کے حوالے سے معروف نام لطیف بھٹی ، اشرف بھٹی شامل ہیں ۔ نیدرلینڈز سے ساجد بھٹی، عابد شکیل، سرفراز اعجاز، معروف ادبی، سیاسی پہچان جناب پرویز اقبال، سیلویسٹر تائر بھٹی اور واٹسن گل شامل ہیں۔ پاسٹر ندیم دین ہالینڈ اور پاسٹر جان اشرف مزہبی شخصیت کے طور پر نہ صرف بیلجئم اور ہالینڈ کی نماینگی کریںگے بلکہ اس تحریک میں اہم کردار ادا کرینگے۔ اس کے علاوہ یورپ اور برطانیہ کے وفود کی اب تک کی تفصیل مندرجہ زیل ہے۔
1395187_524756280951046_1225348996_n
برطانیہ سے اب تک دو وفود کی جانب سے کنفرم کیا گیا ہے۔ معروف سماجی نام ،کالم نویس اور دانشور جناب ناصر سیید جو کہ پہلے دن سے اپنے قیمتی مشوروں سے میری راہنمای کرتے رہے ہیں۔ اور مجھے ان سے سیکھنے کا موقع ملا ہے وہ بھی اپنے وفد کے ساتھ تشریف لا رہے ہیں۔ برطانیہ سے ہی ایک نام جو کہ کسی تعارف کا محتاج نہی ،مشہور اینکر اور سماجی شخصیت تسکین خان بھی اپنے وفد کے ساتھ تشریف لا رہے ہیں۔ برطانیہ کا ایک جوشیلہ نوجوان اور سیاسی نام ولسن چوہدری نے کہا ہے کہ وہ جلد میٹینگ کر کی اپنی آمد کو یقینی بنایے گے۔

یورپ سے ناروے سے جناب ظفر اقبال جو کے مسیحی خدمات میں آگے ہوتے ہیں بلکہ یورپ میں اپنی پہچان بھی رکھتے ہیں وہ بھی آ رہے ہیں اور اگر ناروے یا اس کے گردؤنوا سے کوئ اور بھی اس وفد کا حصہ بننا چایے تو وہ ظفر اقبال صاحب سے رابطہ کر سکتا ہے۔

جرمنی سے جاوید عنایت جو کہ نہ صرف یورپ بلکہ پاکستان میں بھی سیاسی طور پر سرگرم رہے ہیں، اپنے وفد کے ساتھ ہونگے۔ اس کے علاوہ فرانس سے بھی دو وفود کی کنفرمیشن ہے۔ ایک وفد جناب جان تسنیم کی سرپرستی میں شامل ہو گا اور ایک وفد جناب شوکت رضا کی سرپرستی میں ہو گا ان کے ساتھ خان ریاض بھی ہونگے۔

ہمارے تمام وفود قابل احترام ہیں، آپ اگر کوئ تقریر یا اپنے خیالات کا اظہار کرنا چاہتے ہیں تو برائےمہربانی اپنے نام پہلے سے لکھ دیں، کوشش کریںگے کہ ایک وفد سے ایک نمایندہ لیا جایے اگر وقت نے اجازت دی تو اور بھی لوگ اپنے خیالات کا اظہار کر سکتے ہیں۔

مضید رابطے کے لیے بیلجیئم سے
جناب لطیف بھٹی
0032-499354539
latif.bhatti8@telenet.be

نیردلینڈز
واٹسن گل،
0031-616494260
watsongill9@yahoo.com

Advertisements