واٹسن گل،
نیدرلینڈز: 11-11-2013
tahir2-455x400
سابق وزیر صحت پنجاب کو ڈینگی کے کنٹرول میں ناکام ہونے پر شہباز شریف نے بےعزت کر دیا۔ مگر شہباز شریف گُزشتہ پانچ سال وزیر اعلی پنجاب کے عہدے کے ساتھ وزیر صحت کی زمہداری بھی سمبھالے ہوئے تھے۔ اور گزشتہ چار سالوں میں ڈینگی کی وجہ سے صرف پنجاب میں ہزاروں لوگ مر گئے۔ کیا پاکستان میں کوئ مائ کا لال ہے جو شہباز شریف کو انکی نا اہلی پر اس طرح بے عزت کرسکے۔ پاکستان کا ایک بچہ بھی جانتا ہے کہ پنجاب میں گزشتہ پانچ سالوں میں صحت کے امور پر کوئ کام نہی ہوا۔ بلکہ صوبہ پنجاب پر میڈیا کی جانب سے صحت کے امور پر بہت تنقید کی گئ۔ جس میں اے آر وائ اور مبشر لُقمان سب سے آگے رہے۔ پنجاب میں ہسپتالوں کی حالت نہایت خستہ تھی۔ جعلی میڈیسن کا اسکینڈل سامنے آیا۔ ڈینگی کے عفریت نے پنجاب کو پکڑے رکھا۔ اور سب سے بڑھ کر پنجاب میں ڈاکٹرز کی ہڑتال۔ نرسوں کی ہڑتال وغیرہ وغیرہ۔۔۔۔۔

طاہر خلیل سندھو ایک اقلیتی وزیر تھے اور پھر چند ماہ کی وزارت میں وہ کیا کمال کر سکتے تھے۔ کیا شریف خاندان کے رشتہ دار وزیر اپنی زمہداریاں ٹھیک طور پر نبھا رہے ہیں۔ کیا ان کے سمدھی کے وزیر خزانہ بننے کے بعد پاکستان میں دودھ کی ندیا بہنے لگی ہیں۔ کیا ۔ عابد شیر علی نے قوم کی جان لوڈشیڈینگ سے چھڑا دی ہے۔

اب رہی بات طاہر خلیل سندھو صاحب کے استعفئ کی تو جب ان کی اپنی عزت اور وقار کو ٹھیس پہنچی تب آپ نے یہ قدم اٹھایا۔ اگر آپ اپنا یہ استعفئی پشارو چرچ دھماکے کے موقح پر دیتے تو یقین کریں آپ کی عزت اور وقار میں نہ صرف پاکستان میں بلکہ پوری دُنیا میں اضافہ ہوتا اور اس میں ہمارا کیس اور مضبوط ہوتا۔

Advertisements