واٹسن گل،
نیدرلینڈز:1مارچ 2014
ہم شہباز بھٹی شہید کے خون کو فراموش نہی ہونے دیں گے۔ اور ہمارا یہ لیڈر سدا ہمارے دلوں میں زندہ رہے گا۔
pic_php_
لیوینگ اسٹون اُردو چرچ ہالینڈ نے قومی راہنما شہباز بھٹی شہید کی برسی کی تیاریاں مکمل کر لیں۔ پاسٹرریورنڈ ندیم دین اور چرچ کلیسا کی جانب سے شہباز بھٹی شہید کو زبردست خراج تحسین پیش کیا جائے گا۔
Shahbaz bhatti
میں شہباز بھٹی صاحب کے پارلیمنٹ کے ابتدائ دور میں ان سے نظریاتی طور پر اختلاف رکھتا تھا۔ اور میں نے اپنے اختلاف کے حوالے سے معتد بار لکھا اور اپنی ناراضگی کا اظہار بھی کیا۔ مگر میں نے اس عظیم لیڈر میں وقت کے ساتھ تبدیلی بھی دیکھی جو کہ خوش آئند تھی۔ خاص طور پر گستاخ رسول کے قوانین کے حوالے سے ان کے موقف میں پختگی اور دلیری پر میں ان کا فین بن گیا۔ شہید کون ہوتا ہے، اور کون شہید نہی ہوتا یہ ایک الگ بحث ہے اورپاکستان میں تو اس لفظ نے معنی ہی کھو دیئے ہیں مگر میرے نزدیک وہ شخص جو اپنے اصول پر مضبوطی سے قایم ہو اور جانتا ہو کہ اس رستے پر اس کی جان بھی جا سکتی ہے۔ اور اس کے پاس بھاگنے کے مواقع بھی ہوں اور نہ بھاگے بلکہ اپنے اصولوں اور اپنی قوم کے لئے اپنی جان قربان کر دے وہ شہید ہے۔ شہباز بھٹی صاحب جانتے تھے کہ ان کی جان کسی بھی وقت جا سکتی ہے۔ جس کا اظہار انہوں نے اپنے آخری انٹرویو میں بھی کیا۔ شہباز بھٹی چاہتے تو کسی بھی یورپ کے ملک ،یا امریکہ یا پھر کینڈہ میں پناہ لیے سکتے تھے۔ مگر انہوں نے اپنی قوم کو گُستاخ رسول جیسے قانون کے عفریت سے نکالنے کی کوشش کی اور اپنی جان دے دی۔ خداوند شہباز بھٹی کو اپنی سب سے بہتر جگہ عنایت کریں اور پاکستان میں موجود ہماری کمیونیٹی کی حفاظت کرے۔ آمین

Advertisements