واٹسن گل،
ہالینڈ: 26 مارچ 2014
ہم معروف شاعر، سماجی اور سیاسی شخصیت جناب پرویز اقبال صاحب کے جواں سالہ بھانجے کی اچانک موت پر اپنے شدید دُکھ کا اظہار کرتے ہیں۔ اور خُداوند کریم سے دُعا کرتے ہیں کہ خدا آپکے خاندان کو تسلی اور صبر عطا فرمایے اور مرحوم کو اپنی بہترین جگہ عطا فرمایے۔
ٹیلیفون پرمیں نے جناب پرویز صاحب سے تعزیت کا اظہار کیا تو انہوں نے بتایا کہ انکا بھانجے کاشف شہزاد کو ہارٹ اٹیک ہوا جو جان لیوا ثابت ہوا مرحوم نے بیوہ کے ساتھ دو معصوم بچونکوں چھوڑا اور جہان سے کوُچ کر گیا۔

1888665_687222968005732_1737137492_n(1)
میں سمجھتا ہوں کہ ہم لفظوں سے تو کسی کو تسلی نہی دے سکتے مگر مسیحی ہونے کے ناطے غم زدہ خاندان کی تسلی کے لیئے دُعا ضرور کر سکتے ہیں۔
کل یوروپیئن پارلیمنٹ میں میٹینگ ہے اور جناب پرویز اقبال صاحب ہمارے وفد کا ایک اہم حصہ تھے۔ ان کے خاندان میں ہونے والے اس سانحے کی وجہ سے وہ کل کی میٹینگ میں شامل نہی ہونگے ۔پرویز صاحب نے بتایا کہ کل پاکستان میں میموریئل سروس کا انقاد کیا گیا ہے، جس کی وجہ سے وہ میٹینگ میں شامل ہونے سے قاصر ہیں۔ یقینی طور پر ہم جناب پرویز صاحب کی قائدانہ صلاحتیوں سے محروم ہونگے ۔مگر میں سمجھتا ہوں کہ پرویز صاحب کی زیادہ ضرورت اس غم کے موقع پر ان کے خاندان کو ہے۔ اور ہم بھی اپنی خاندانی عبادت میں اس غمزدہ خاندان کو یاد رکھیں گے۔

Advertisements