ہالینڈ میں پاکستانی مسیحی پناہ گزین ندیم بشیر کو ڈیپورٹ کئے جانے کا حُکم منسوخ کر دیا گیا۔ واٹسن سلیم گل،

ہمارا خدا طاقت والا قدرت والا خدا ہے جو ہماری آہ زاری کو سُنتا ہے اور ہمیں جواب دیتا ہے۔

مجھے ایک مسیحی پناہ گزین سائمن جو کہ خود بھی روٹرڈیم کی ایک جیل میں گُزشتہ چند ماہ سے قید ہے فون آیا۔ اس نے بھرائ ہوئ آواز میں مجھے بتایا کہ اس کے ساتھ ایک پاکستانی مسیحی ندیم کو کل صبح ڈیپورٹ کیا جارہا ہے۔ اور اسے ائرپورٹ لے جایا جائے گا۔ اس کی ٹکٹ بھی بن چُکی ہے۔ وہ بھی پریشان تھا اور میں بھی پریشان ہو گیا کہ ہم تو کمزور ہے کیا کر سکتے ہیں۔ لیکن ہمیں یہ خیال آیا کہ ہمارا خدا طاقت کا سرچشمہ ہے۔ میں نے سائمن کو تسلی دی اور کہا کہ ایک تو ہم دُعا کریں گے دوسرا کوشش کرتے ہیں۔ میں نے چھوٹا سا ایک خط لکھا اور اس میں حکومت سے ایک سوال کیا کہ اگر ندیم یا کوئ بھی مسیحی ہالینڈ سے پاکستان ڈیپورٹ ہوتا ہے اور اگر پاکستان میں اس کے ساتھ کُچھ غلط ہوتا ہے تو کون اس کا زمہ دار ہو گا۔ یہ خط میں نے کچھ پارلیمنٹ ممبرز، انسانی حقوق کے نمایندوں اور میڈیا کے کچھ دوستوں کو بھی لکھا۔

خداوند کے فضل سے ابھی ابھی مجھے یکے بہ دیگرے دو ای میلز موصول ہوئ ہیں ایک تو پارلیمنٹ ممبر کی جانب سے اور دوسری ایک معروف انسانی حقوق کی تنظیم جوبلی کمپیئن کی جانب سے اور دونوں نے مجھے لکھا ہے کہ ندیم بشیر کے ڈیپورٹ کئے جانے کہ احکامات منسوخ کر دیئے گئے ہیں۔ اور اس سلسلے میں کچھ قانونی تقاضے پورے کئے جارہے ہیں۔

میں ہالینبڈ میں اپنی کمیونٹی کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ ہالینڈ میں تمام پاکستانی چرچز، تنظیموں مزہبی، سیاسی اور سماجی راہنماؤں کو بھی مباکباد پیش کرتا ہوں۔ میں کہنا چاہتا ہوں کہ مسیحی پناہ گزینوں کے حقوق کے لئے بہت سے لوگ جداگانہ طور پر کام کر رہے ہیں اور یہ ہم سب کی مشترکہ کامیابی ہے۔ مگر یہ کامیابی اور بھی نکھر سکتی ہے اگر ہم سب مل کر متحد ہو کر اپنے مسیحی مہاجرین کے لئے مشترکہ طور پر کام کریں۔

خداوند رب الافواج، رب الالمین، یہووا یری، خداوندوں کا خدا، بادشاہوں کا بادشاہ آپ سب کو بہت برکت دے۔

Advertisements