پاکستانی کرسچن آفتاب بہادر مسیح کا آج کوٹ لکھپت جیل میں پھانسی دے دی گئ۔ واٹسن سلیم گل،
900964-aftabx-1433908333-183-640x480
آفتاب مسیح کو جب پھانسی کے لئے لے جایا جا رہا تھا تو وہ رو رہا تھا اور چیخ رہا تھا کہ وہ بے قصور ہے۔ جب یہ جرم ہوا تو افتاب مسیح کی عمر 15 سال تھی۔ جبکہ سنہ 2000 میں سزائے موت کے قیدی کی کم از کم سزا 18 سال تھی۔ انسانی حقوق کے چیمپیئنز دیکھتے رہ گئے اور کچھ نہ کر سکے۔ آفتاب کو جب گرفتار کیا گیا تھا تو اس سے 50000 ہزار روپئے کی رشوت طلب کی گئ تھی جہ نہ دینے پر اسے اس مقدمہ میں پنھسا دیا گیا۔ اس نے بارہا اس بات کا زکر کیا کہ پولیس نے اس پر تشدد کر کے اقبالیہ بیان لیا ہے اور یقین دلایا کہ وہ بچ جائے گا مگر اسے تختہ دار پر لٹکا دیا گیا۔

Advertisements