یورپی یونین نے پاکستان میں سزائے موت پر عمل درآمد پر اپنی سخت تشویش کا اظہار کیا ہے اور پاکستانی حکومت سے کہا ہے کہ پاکستان بین الاقوامی کنونشنز کی پابندی کرے۔ واٹسن سلیم گل۔
download (1)
یاد رہے کہ یوروپیئن یونین نے پاکستان کو انسانی حقوق سے مشروط بہت سی تجارتی مراعات دیں ہیں۔ جن میں جی ایس پی پلس کا درجہ سر فہرست ہے۔ جس سے پاکستان کو ٹیکسٹائل کی مصنوعات میں اربوں ڈالر ٹیکس کی چھوٹ دی گئ ہے جس سے پاکستان کی معاشی ترقی میں تیزی دیکھی گئ ہے۔

یوروپئن یونین نے حکومت پاکستان پر زور دیا ہے کہ وہ جلد سے جلد سزائے موت پر پابندی کو یقینی بنانے کے لئے اقدامات کرے۔ اس کے علاوہ پاکستان میں 18 سال سے کم عمر کے مجرم کو سزائے موت دینا بھی بین الاقوامی انسانی حقوق کی پامالی ہے ۔ جس پر پاکستان کو ان معاشی مراعات سے دستبردار کیا جاسکتا ہے اور پاکستانی مصنوعات کی یوروپیئن منڈیوں میں ٹیکس کی چھوٹ کے فیصلے واپس لئے جاسکتے ہیں۔ یورپی یونین نے کہا ہے کہ ’یورپی یونین کے جی ایس پی پلس ریگولیشن (تجارتی مراعات) کے تحت بین الاقوامی کنونشن پر موثر عمل درآمد بہت ضروری ہے۔
یوروپئن یونین نے اس بات پر زور دیا ہے کہ پاکستان بین الاقوامی قوانین کا احترام کرے اور یہ یقین دلائے کہ اس پر سختی سے عمل ہو گا۔

Advertisements