ہالینڈ اور بیلجئیم کے پاکستانی مسیحی 29 جنوری بروز جمعہ کوہنگامی بنیادوں پر ہالینڈ میں تھائ لینڈ کی ایمبیسی کے سامنے مسیحیوں کے ساتھ غیر انسانی سلوک کے خلاف مظاہرہ کریں گے۔ بوبی بوب
12890_348145035374311_5588696857322364300_n
تھائ لینڈ میں ہزاروں پاکستانی مسیحی تارکین وطن خواتین ، بچے ، بزرگ اور جوان انتہائ کسمپسری کی حالت میں زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔ مسیحی خاندانوں سمیت خواتین اور کمسن بچوں کو بھی جیلوں میں رکھا جا رہا ہے۔ جس کی وجہ سے بہت سے زہنی اور جسمانی طور پر بیمار ہو چکے ہیں۔ ایک کمرہ جس میں 15 لوگوں کی گنجائش ہیں وہاں پچاس لوگ ایک دوسرے کے ساتھ جُڑ کر سونے پر مجبور ہیں جس سے ان میں جلدی بیماریاں بھی ان کی تکلیفوں میں اضافہ کر رہی ہیں۔ یہ حالات سراسر انسانی حقوق کے خلاف ہیں۔

اس احتجاج کی انتظامی امور کی کمیٹی میں شامل پاسٹر ولئیم پیغانی ، پاسٹر منور ، جمشید ملک ، یونس ولئیم ، مجید ملک ، لعزرس کے علاوہ پاسٹر ندیم دین ، اعجاز زوالفقار میتھیو ، کلیم سلیم ، عابد شکیل ، بوبی بوب ، واٹسن سلیم گل ، منگت مسیح، پاسٹر پرویز اقبال ، فراز اعجاز ، گریفن عمانئیول ، پرویز ولئیم ، سِسل جیمس اور بیلجئیم سے جناب لطیف بھٹی ، پاسٹر کیمرون تھامس ، پاسٹر جان اشرف ، یعقوب مسیح ، ، خالد چوہدری،شاہد پرویز شامل ہیں۔ ہالینڈ اور بیلجیئم کی پاکستانی مسیحی کمیونٹی نے یہ عہد کیا ہے ہ وہ اپنے پریشان حال بہن بھائیوں ے لئے ہر دروازہ پر دستک دہیں گے۔
یاد رہے کہ 4 مارچ 2016 کو پورے یورپ اور برطانیہ کے مسیحی سویٹزرلینڈ کے شہر جنیوا میں ان مظالم کے خلاف اپنی آواز بلند کریں گے ۔