لاہور میں انسداد دہشت گردی کی ایک خصوصی عدالت نے توہین قرآن کے جھوٹے الزام میں زندہ جلائے جانے والے مسیحی جوڑے کے قتل کا انصاف کر دیا۔ واٹسن سلیم گل،
Christian-couple-killed-for-desecrating-Holy-Quran-Kot-Radha-Kishan
پاکستان کے شہر لاہور میں واقع انسداد دہشت گردی کی ایک خصوصی عدالت نے توہین قرآن کے الزام میں زندہ جلائے جانے والے جوڑے کے پانچ قاتلوں کو سزائے موت سُنا دی۔ 35 سالہ شہزاد مسیح اور 30 سالہ شمع بی بی کو جو کہ اس وقت حاملہ بھی تھی ایک ہحوم نے جھوٹے الزام میں زبدست تشدد کر کے زندہ اینٹوں کی بھٹی میں پھینک دیا تھا۔ اس بد نصیب جوڑے کی ہڈیاں بھی جل کر راکھ بن چُکی تھیں۔
عدالتی فیصلے کے مطابق پانچ افراد حافظ اشتیاق، محمد حنیف، عرفان شکور، ریاض اور مہدی خان کو میاں بیوی کے قتل کا براہ راست مجرم قرار دے کر دو دو مرتبہ سزائے دینے کا حکم دیا جبکہ نو دیگر ملزموں محمد حسین، نوید اسلم، ارسلان، لطیف، عارف بشیر، منیر احمد، محمد رمضان، محمد عرفان، حافظ شاہد کو دو دو سال قید کی ساز سنائی ہے۔ قانون کے مطابق سزا پانے والے مجرم ہائ کورٹ ، سپریم کورٹ اور صدر پاکستان سے اپیل کا حق رکھتے ہیں۔