سویٹزرلینڈ کے شہر جینیوا میں اقوام متحدہ کے دفتر کے سامنے پاکستانی مسیحیوں کا مظاہرہ نہایت کامیاب رہا،IMG-20180602-WA0018

برطانیہ سمیت یورپ کے دیگر ممالک سے پاکستانی مسیحیوں کے راہنماؤں نے بھرپور انداز میں شرکت کی۔ اس مظاہرے میں اقوام متحدہ کے زیلی ادارے یو این ایچ سی آر سے مطالبہ کیا گیا ہے تھائ لینڈ، ملیشیا اور سری لنکا سمیت دیگر ممالک میں پاکستانی مسیحیوں کے ساتھ بین الاقوامی انسانی حقوق کے قوانین کو سامنے رکھتے ہوئے ان کی پناہ کی درخواستوں پر فیصلے کئے جایں۔ ایک طرف ان کی اپنی سالانہ رپورٹوں میں پاکستان کو تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے کہ اقلیتیں وہاں محفوظ نہی ہیں اور دوسری طرف مسیحیی مہاجرین کی پناہ کی درخواستیں مسترد کر دی جاتی ہیں۔ یہ انسانی حقوق کے بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہے۔ پاکستانی مسیحی مظاہرین نے پلے کارڈ اور بینیرز اٹھا رکھے تھے۔

FB_IMG_1528038212086

ہالینڈ سے پاسٹر ندیم دین ، گلباز فضل، بوبی یوسف، جمشید ملک، یونس ویلئم، پاسٹر عمران گل، گیسر ڈانئل، عظیم مسیح، جگنو کینڈی، سسل جیمس، ڈیئنل اعوان، مائیکل تھامس، سنمبل نورین  اور واٹسن سلیم گل، جبکہ بیلجئم سے لطیف بھٹی شاہد پرویز، بشپ ارشد کھوکھر، پرویز بھٹی ، اشرف بھٹی، لوقا، یوسف،  سویٹزرلینڈ سے عمیرہ خیسگر، نورین برکت، روحی فرنینڈس، جاوید آسٹن،صبیحہ ندیم، سٹیفن برکت،  جرمنی سے عاشر سرفراز اور آرنلڈ آصف شامل ہیں۔ اٹلی سے معروف شاعر، مصنف اور دانشور جیم فے غوری اورمعروف سیاسی شخصیت نوئیل ملک ، ڈنمارک سے انسانی حقوق کی علمبردار صدف مرزا، برطانیہ سے سابق ایم پی اے سندھ سٹیفن پیٹر، معروف صحافی اور سیاسی شخصیت شفیق الزما اور محبوب الہیٰ بٹ ، ناصر سید، فرانس سے فاروق انصر، اینجلو اجمل، تسنیم جان، ریاض مسیح، عارف مسیح، عمران گل، شاہد مسیح، مالٹا سے ہاشیم شہزاد تھے۔ اسی دوران سسٹر عمیرا خیسگر نے اقوام متحدہ کے دفتر واقع جینیوا میں یو این ایچ سی آر کے نمایندے کو پٹیشن حوالے کی جس میں تھائ لینڈ، ملیشیا اور دیگر ممالک میں مشکلات کا شکار پاکستانی مسیحیوں کے حوالے کمیشن کو اپنے تحفظات سے آگاہ کیا گیا۔

FB_IMG_1528038171739 (1)IMG-20180602-WA0009FB_IMG_1528038195139

ہمارے حقیقی لیڈرز اپنی قوم کی آواز بن کر جینیوا میں دنیا کے سب سے بڑے اور معتبر ادارے کے سامنے احتجاج کر رہے تھے۔ یہ لیڈرز جن میں خواتین بھی تھیں اور حضرات بھی شامل تھے۔ یہ ہیں قوم کے حقیقی لیڈرز جو اپنا وقت اپنا پیسہ خرچ کر کے جہاں بھی قوم کو ان کی ضرورت ہو پہنچ جاتے ہیں۔

IMG-20180602-WA001334484447_2042644202661361_1329004185806438400_n

مظاہرے کے اختتام کے بعد سویٹزرلینڈ کے مسیحی میزبانوں نے یورپ سے آئے ہوئے مظاہرین کے لئے کھانے اور پینے کا بندوبست کر رکھا تھا ۔ ان کے خلوص اور محبت کی مثال نہی ملتی۔

Screenshot_2018-06-04-12-07-09.pngScreenshot_2018-06-04-12-12-48.pngScreenshot_2018-06-04-12-10-22.pngScreenshot_2018-06-04-12-10-09.pngScreenshot_2018-06-04-12-13-13.pngScreenshot_2018-06-04-12-09-18.pngScreenshot_2018-06-04-11-58-16.pngScreenshot_2018-06-04-12-00-58.pngScreenshot_2018-06-04-12-06-33.pngScreenshot_2018-06-04-12-03-18.png

Advertisements